34

پیپلز پارٹی نے كشمیر كی آزادی كے لیےایك ہزار سال تك جنگ لڑنے كا جو اعلان كیاتھا یہ اسی كا شاخسانہ ہے كے ملك دشمن قوتیں مختلف حربوں سے پیپلز پارٹی كو مٹانے كی مزموم كوششوں میں مروف رہتے ہیں صدف شیخ نے كہا كہ اسپیکر قومی اسمبلی اگر آصف زرداری کے پراڈکشن آرڈر جاری نہیں کرسکتے تو فورا مستعفی ہوجائیں مركزی سیكرٹری جنرل پی پی پی آزاد كشمیر سابق وزیر حكومت محترمہ صدف شیخ

مركزی سیكرٹری جنرل پی پی پی آزاد كشمیر سابق وزیر حكومت محترمہ صدف شیخ نے گزشتہ روز مظفرآباد پریس كلب میں صحافیوں سے گفتگو كرتے ہوے كہا كہ پیپلز پارٹی نے كشمیر كی آزادی كے لیےایك ہزار سال تك جنگ لڑنے كا جو اعلان كیاتھا یہ اسی كا شاخسانہ ہے كے ملك دشمن قوتیں مختلف حربوں سے پیپلز پارٹی كو مٹانے كی مزموم كوششوں میں مروف رہتے ہیں صدف شیخ نے كہا كہ اسپیکر قومی اسمبلی اگر آصف زرداری کے پراڈکشن آرڈر جاری نہیں کرسکتے تو فورا مستعفی ہوجائیں،
نواب شاہ سے وزیرستان تک اراکین اسمبلی گرفتار ہورہے ہیں اور اسپیکر اسمبلی ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہیں،
یہ کیسے اسپیکر ہیں جو اپنے ہاؤس کے اراکین کے لئے پراڈکشن آرڈر تک جاری نہیں کرسکتے،
علی وزیر، محسن داوڑ، سعدرفیق اور آصف زرداری کے پراڈکشن آرڈرز کا اجرا نہ ہونا اراکین کے حقوق کے منافی ہے،
اسپیکر قومی اسمبلی اپنی غیرجانب دارانہ حیثیت مکمل طور پر کھوچکے ہیں،
حکومتی بینچوں سے ملنے والے اشاروں پر ایوان کو چلانا کسی اسپیکر کے شایان شان نہیں،
اسپیکر قومی اسمبلی بتائیں کہ کس کے کہنے پر انہوں نے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو دو مرتبہ ایوان میں تقریر کرنے سے روکا؟
بطور پارلیمانی لیڈر یہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا استحقاق ہے کہ وہ ایوان میں تقریر کریں، صدف شیخ نے كہا كہ تحریك انصاف انصاف كے نام پر دھبہ بن چكی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں